URDUSKY || NETWORK

پاکستان میں مچھروں سے نئی بیماری ’ویسٹ نائل‘ بخار کے شواہد

پاکستان میں مچھروں سے پھیلنے والی نئی بیماری ’ویسٹ نائل‘ بخار کے شواہد ملنے لگے

28

پرندے بڑی تعداد میں  مرنے لگے

ماہرین نے اس حوالے سے پاکستان میں بڑی تعداد میں پرندوں کے مرنے پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ پرندوں کا بغیر کسی وجہ کے بڑی تعداد میں مرنا ’ویسٹ نائل‘ وائرس کی وجہ سے ہو سکتا ہے۔

’ویسٹ نائل‘ کا سبب کیولیکس مچھر پاکستان میں موجود

ماہرِ صحت ڈاکٹر فیصل محمود کے مطابق ’ویسٹ نائل‘ وائرس ڈینگی اور ملیریا کی طرح مچھروں سے پھیلتا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ ’ویسٹ نائل‘ وائرس پھیلانے والا مچھر کیولیکس بھی پاکستان میں موجود ہے۔

ماہرین کے مطابق کیولیکس مچھر کی بیشتر اقسام پرندوں کا خون پینا پسند کرتی ہیں جبکہ کچھ اقسام انسانی خون پی کر پروان چڑھتی ہیں۔

’ویسٹ نائل‘ پولیو جیسی معذوری کا سبب

ماہرِ صحت ڈاکٹر ارم خان کا کہنا ہے کہ 2016ء میں تحقیق کے ذریعے ’ویسٹ نائل‘ وائرس کی پاکستان میں موجودگی ثابت کر چکے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ ’ویسٹ نائل‘ وائرس پولیو کی طرز کی معذوری کا سبب بن سکتا ہے۔

’ویسٹ نائل‘ پر تحقیقات کا حکم

ڈی جی ہیلتھ پاکستان ڈاکٹررانامحمد صفدر کے مطابق ’ویسٹ نائل‘ وائرس کی پاکستان میں موجودگی کی غیر مصدقہ اطلاعات ہیں۔

انہوں نے اس حوالے سے بتایا کہ قومی ادارۂ صحت کو ’ویسٹ نائل‘ وائرس پر تحقیقات کے لیے کہہ دیا ہے۔

’ویسٹ نائل‘ سے پریشان ہونے کی ضرورت نہیں: ماہرین

ماہرینِ صحت کا اس حوالے سے یہ بھی کہنا ہے کہ ’ویسٹ نائل‘ وائرس کی پاکستان میں موجودگی سے پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے۔

بشکریہ: جنگ