ماں

mother-and-child-painting

ماں
تیرے پیار کے ساون کا ہر قطرہ ماں
میرے تَن مَن میں کچھ ایسے اُترا ماں
تیر ی پیاری میٹھی  میٹھی  باتو ں  نے
حال  او ر ماضی کر دیا میرا ستھرا ماں
تیری دُعائیں ! مستقبِل  کا  نُور  ایسا
گھُپ اندھیرے میں مجھے رکھے روشن ماں
تیرے ہی دم سے ہیں بہاریں دُنیا میں
تیرے ہی دم سے شرق و غرب ہیں روشن ماں
تیرے ہی دم سے روشن گھر کا آنگن ہے
ہے اندھیرا چار سُو ، تجھ بِن پیاری ماں
تو نے میری خاطر ہیں کتنے  دُکھ  جھیلے !
ہر دُکھ میں ہزاروں دُکھ تھے پیاری ماں
پاﺅں تلے تیرے جنّت رکھ کر اللہ نے
میری آخرت ، بھی یوں سنواری پیاری ماں
تیری دُعا سے ٹل جاتے ہیں رنج و الم
اپنی دُعا  میں یا د مجھے تو رکھنا  ماں
طوفانوں کا  مُنہ ، پَل میں موڑ دے جو
قوّی ہیں اِتنی تیری دعائیں پیاری  ماں
بَن کر رحمت کی برسات میرے اُوپر
رِم جِھم برسیں تیری دعائیں پیاری  ماں
اُف نہ کرنا ماں کے سامنے تو بھائی
فرمانِ رَب ہے ، تیری ماں ہے پیاری ماں
عبدالمجید بُخاری۔

 

Related Articles

Leave a Reply

Back to top button