سٹاک ہولم واٹر پرائز امریکی ماہر کارپینٹر کے لیے


 

امریکی محقق سٹیفن کارپینٹر کو جھیلوں کے ماحولیاتی نظاموں سے متعلق ان کی ریسرچ کی بنیاد پر اس سال کے س‍ٹاک ہولم واٹر پرائز کا حقدار قرار ٹھہرایا گیا ہے۔

 

اس امریکی ماہر کو یہ انعام دینے کا فیصلہ اس بارے میں ان کی تحقیق کی بنیاد پر کیا گیا کہ انہوں نے یہ وضاحت کردی تھی کہ جھیلوں کے قدرتی ماحولیاتی نظام انسانوں کے علاوہ اپنے ارد گرد کے ماحول سے کس طرح متاثر ہوتے ہیں۔

سٹاک ہولم واٹر پرائز کی جیوری کےاعلان کے مطابق سٹیفن کارپینٹر کی تحقیق سے اس بارے میں بڑی  مدد ملی کہ پانی کے وسائل کا بہتر انتظام کس طرح کیا جا سکتا ہے۔ 59 سالہ کارپینٹر امریکی شہر Madison میں یونیورسٹی آف Wisconsin میں حیاتیات اور Limnology  کے پروفیسر ہیں۔ اس اعزاز کے ساتھ انہیں ڈیڑھ لاکھ ڈالر کے برابر نقد انعام بھی دیا جائے گا۔

 سٹیفن کارپینٹر کی تحقیق سے اس بارے میں بڑی  مدد ملی کہ پانی کے وسائل کا بہتر انتظام کس طرح کیا جا سکتا ہے سٹیفن کارپینٹر کی تحقیق سے اس بارے میں بڑی مدد ملی کہ پانی کے وسائل کا بہتر انتظام کس طرح کیا جا سکتا ہے

پروفیسر کارپینٹر کو سٹاک ہولم واٹر پرائز اس سال 25 اگست کو ہونے والی ایک تقریب میں ورلڈ واٹر ویک کے دوران سویڈن کے دارالحکومت میں شاہ کارل گسٹاف کی طرف سے دیا جائے گا۔

سویڈش دارالحکومت سے آمدہ رپورٹوں میں بتایا گیا ہے کہ سٹیفن کارپینٹر کی ریسرچ سے بہت سے ماہرین کو یہ سمجھنے میں بھی مدد ملی کہ آبی ذخائر کے طور پر جھیلوں کے ecosystem معدنیات اور مختلف قسموں کے جانوروں کی موجودگی اور ماہی گیری جیسے عوامل سے کس طرح اور کس حد تک متاثر ہوتے ہیں۔

گزشتہ برس سٹاک ہولم واٹر پرائز امریکی خاتون ریسرچر Rita Colwell کو دیا گیا تھا۔ اس کی وجہ اس امریکی سائنسدان کی طرف سے پانی سے پھیلنے والی ہیضے جیسے متعدی بیماریوں سے متعلق نئی تحقیق بنی تھی۔ یہ سالانہ انعام دینے کا سلسلہ سن 1990 میں شروع ہوا تھا۔

بشکریہ ڈی ڈبلیوڈی

Related Articles

Leave a Reply

Back to top button