جاپان کا بدترین زلزلہ، سونامی سے تباہی، 60افرادہلاک

جاپان کا بدترین زلزلہ، سونامی سے تباہی، 60افرادہلاک

Updated at 1825 PST
ٹوکیو…جاپان میں8.9 شدت کے شدید زلزلے نے بدترین تباہی پھیلائی ہے۔ملک کے مختلف ساحلوں سے سونامی کی چار سے دس میٹر تک بلند لہریں ٹکرائی ہیں۔اب تک ہلاک افراد کی تعداد60ہوچکی ہے جبکہ متعدد افرادلاپتہ ہیں۔ امریکی جیولوجیکل سروے کے مطابق جاپان کی3سو سالہ تاریخ میں آنے والایہ بد ترین زلزلہ ہے۔ زلزلہ جاپان کے جزیرے ہنشو کے شہر سینڈائی کے قریب آیا اور اس کا مرکز ٹوکیو سے382 کلومیٹر دور شمال مشرق میں تھا۔ زلزلے کے بعد سینڈائی شہر سے دس میٹر بلند لہریں ٹکرائی اور پورا شہر پانی کی زد میں آگیا۔ ملک کے شمال میں کمائے چی کے ساحل سے چار میٹر اونچی سونامی کی لہر یں ٹکرائی ہیں۔ درجنوں گاڑیاں پانی میں بہہ گئیں اور ساحل پر کھڑے جہاز پانی کی شدت سے اپنی جگہ سے ہٹ گئے۔ سینڈائی شہر میں کئی عمارتوں میں آگ لگ گئی جبکہ زلزلے سے ٹوکیو میں بھی متعدد عمارتیں گرگئیں ۔ٹوکیوکا ڈزنی لینڈپارک پانی میں ڈوب گیا ہے۔ٹوکیو اور اطراف کے40 لاکھ مکانات کی بجلی منقطع ہوگئی ہے۔ جاپانی خبررساں ایجنسی کا کہنا ہے کہ ٹوکیو کے قریب آئل ریفائنری میں آگ لگ گئی ہے اور بحرالکاہل کے ساحل پر دو ایٹمی پاور پلانٹ بند ہو گئے ہیں۔جاپان کے فوکوشیما دائی چی جوہری پلانٹ کے قریب رہنے والے2ہزار افراد کو نقل مکانی کی ہدایت جاری کردی گئی ہے۔جاپانی وزیر اعظم کا کہنا ہے کہ بند ہونے والے ایٹمی پلانٹ سے تابکار مادے کا اخراج نہیں ہوا ہے۔ متاثرہ علاقوں میں جاپانی فضائیہ کے طیارے نقصانات کا جائزہ لے رہے ہیں۔جاپانی بحریہ کے جہاز متاثرہ علاقوں کی جانب روانہ کر دیے گئے ہیں ۔جاپان نے زلزلے سے متاثرہ علاقوں میں بحالی کے کاموں کے لیے امریکا سے مدد طلب کرلی ہے۔وزیر اعظم نے عوام سے پرسکون رہنے کی اپیل کی ہے اور فوج کوتمام ضروری اقدامات کا حکم دیا ہے۔جاپان میں زلزلے کے بعد روس ،جزیرہ ماریانا ،فلپائن،انڈونیشیا، آسٹریلیا اورجنوبی امریکا سمیت53 ملکوں میں سونامی وارننگ جاری کر دی گئی ہے اور لوگوں کو ساحلی علاقوں سے دور جانے کی ہدایت کی گئی ہے۔ 

بشکریہ جنگJAPAN_EARTHQUAK_March_3_2011

Related Articles

Leave a Reply

Back to top button