صنعتی علاقوں میں فوج

شہزاد اقبال

پنجاب کی نسبت قدرے کم لیکن سندھ کا سیاسی منظر نامہ بھی گزشتہ ہفتے گرم رہا اور اس گرمی کی وجہ وزیر داخلہ سندھ ڈاکٹر ذوالفقار مرزا کی گرم مزاجی تھی جو انہوںنے ایک تقریب میں دکھائی ،کہنے کو تو وہ کہہ گئے کہ پنجاب میں پی پی پروار کیا تو کراچی سے کشمور تک ن لیگ کا ایک دفتر بھی نہیں چھوڑ ےں گے، نواز شریف غیر جمہوری ہتھکنڈوں سے بازرہیں ورنہ سنگین نتائج نکلیں گے، شریف برادران ہمیں دھکے دے کر پنجاب حکومت سے نکالنا چاہتے ہیں جس طرح ارباب رحیم کو جوتے پڑے کسی اور کو بھی پڑسکتے ہیں بد معاش نہیں لیکن ملک کیلئے بد معاشی کروں گا اور یہ کہ نواز شریف کو پاگل خانے جا کر تقر یر کرنی ہوگی۔لیکن پیپلز پارٹی کے اس جانباز جےالے کی اداکاری بھی ن لیگ کو پنجاب مےں پیپلز پارٹی کے وزرا کو کابینہ سے نکالنے سے نہ روک سکی لیکن اس سے قبل ہی یہ مرد جانباز پچھلے قدموں پر آچکا تھا کہ میرے بیان کامقصد نواز شریف کی دل آزاری کرنا نہیں تھا، معلوم نہیں ہمارے سیاست دانوں کے مقاصد کیا ہوتے ہیں کہتے کچھ اور کرتے کچھ ہےں لیکن کیاکشمور تک ن لیگ کے دفا ترختم کرنے کی دھمکی پر سندھ کی طاقت ورشخصےت عملدرآمدکر سکتی ہے بصورت دیگر انہیں شیر کی کھال اب اتارنی ہی پڑے گی ادھر پیپلز پارٹی سندھ کونسل کے وزیر اعلیٰ ہاوس میں ہونے والے اجلاس میں ارکان نے ن لیگ کی ڈیڈلائن کی سیاست کو مسترد کردیا اور سازشیں بند کرنے کو کہا ۔ارکان نے صدرآصف علی زرداری ،وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی اور وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ پر مکمل اعتماد کرتے ہوئے کہا کہ10نکات ہوں یا20انہیں عوام کے urdusky-writer-12سامنے لانے چاہئےں،دریں اثناءسندھ اسمبلی کے ارکان نے صنعت کاروں کو تحفظ دینے کیلئے فوج بلانے کی پیشکش کی ہے۔ اسمبلی ارکان نے ایک نوجوان صنعت کار وقاص منڈے کے گزشتہ دنوں ہونے والے قتل کے نتیجہ میں یہ پیشکش کی، کراچی کے صنعتی علاقوں میں پولیس کے ساتھ رینجرز بھی تعینات کردی گئی ہے جبکہ چوکیاں بھی بنائی جارہی ہیں ۔ادھرکٹی پہاڑےوںاور سڑک کے کنارے پر رینجرز اور پولیس کی چوکیاں تعمیر کرنے کا بھی فیصلہ ہو گیا ہے کیونکہ گزشتہ کچھ عرصہ سے ےہ علاقہ انتہائی بد نام ہو چکا تھا اس پر حکومت نے 10چوکیاں پہاڑی پر جبکہ باقی سڑک کے دونوں جانب بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔ شہر قائد میں امن وامان کی ناقص صوررتحال جاری ہے اور 24فروری کو نشترروڈپر فائرنگ سے سنی تحریک کے 2کارکنوں کو قتل کردیا گیا مقتول دانش کو14اور وسیم قادری کو8گولیاں لگیں،گولیوں کی تعداد سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ سیاسی رقابت کی نوعیت کتنی ہے کراچی میں ٹارگٹ کلنگ کی اکاد کا وارداتیںآج بھی ہو رہی ہیںادھر سنی تحریک کے سربراہ ثروت قادری کا کہنا ہے کہ ایسی صورتحال میں سندھ حکومت کو مستعفی ہوجانا چاہئے۔لانڈھی میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کی کاروائی میں تحریک طالبان مالا کنڈ کے امیر رحیم زادہ کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔شہر قائد میں گزشتہ چند مہےنوں میں دہشت گردوں کے اہم رہنماوںکو گرفتار کیاگیا ہے تاہم اس عرصے میں دہشتگردی اور ٹارگٹ کلنگ کی کارروائیوں میں بھی اضافہ ہوا ہے جس سے معلوم ہوتا ہے کہ قانون شکن عناصر اس شہر کے امن کو خراب کرنے کے درپے ہےں۔

عدالتی حکم کے بر خلاف پاکستان اسٹےل میںرےٹا ئرڈ افسران کی کنٹر یکٹ بھرتیوں کا سلسلہ جاری ہے اور2رےٹا ئرڈ کنٹر یکٹ افسران کو خاموشی سے ڈیوٹی کے احکامات جاری کر دیئے گئے ہیں ،سندھ حکومت کو عدالتی حکم کی پاسداری کرنی چاہئے اور ان لوگوں کو ملازمت دینی چاہئے جو میرٹ پر آتے ہیں اقربا پروری اور سیاسی رشوتوں کاسلسلہ ختم ہونا چاہئے سندھ اسمبلی کی قراردار جس میں دستور پاکستان کے مطابق وفاقی ملازمتوں میں سندھ کو نوکریاں دینے کامطالبہ کیا گیاہے درست ہے اس وقت سندھ کو وفاقی ملازمتوں کے حصہ میں سے 37,628ملازمتیں کم ملی ہیں لیکن دستور وقانون کے مطابق سندھ میں بھی میرٹ پر ملازمتیں فراہم کرنا صوبائی حکومت کی ذمہ داری ہے ۔

Related Articles

Leave a Reply

Back to top button